Tagged: samay ka bandhan

0

کمرہ نمبر 17- سمے کا بندھن

اردو ٹیکسٹ: ارم چوہدری ارجمند کو اپنی آنکھوں پر یقین نہیں آ رہا تھا.. وہ دیدے پھاڑ پھاڑ کر سامنے بیٹھی ہوئی آویزہ کو دیکھ رہا تھا… دیکھے جا رہا تھا! اس کے روبرو...

0

اندھا فٹ پاتھیا – سمے کا بندھن

ا ٹیکسٹ: رانا اسامہ سڑک کے کنارے سوکھے ہوئے ٹنڈ منڈ درخت کا سہارا لیے وہ فٹ پاتھ پر کھڑا ہے. ہاتھ میں لاٹھی ہے. آنکھوں پر بڑے بڑے کالے شیشوں والی عینک لگی...

1

سمے کا بندھن

ممتاز مفتی کا افسانوی مجموعہ سمے کا بندھن آواز طاہرہ شمس