قرآن پاک ، بیگم غنی چیمہ

بڑی ہمت اور جرءات کو جٹا پائ تو یہ کہنے کا حوصلہ کیا کہ “قرآن مجید ” میری پسندیدہ کتاب ہے۔۔۔۔۔ اس کمپیٽیشن نے اسی مقام پہ لا کھڑا کیا مجھے آج بھی۔۔۔ جہاں نصاب کے ہر امتحان میں اس وقت کھڑی ہوتی تھی جہاں پسندیدہ کتاب پہ مضمون درکار ہوتا۔۔۔۔ اور یہی شش و پنج اور ہچکچاہٹ میرے حصے میں آتی تھی جو آج آ رہی۔۔۔۔۔ اب یہ ہچکچاہٹ کسک میں بدل رہی ہے۔۔۔۔۔ کیونکہ دعوٰی تو favourite book کا ہے۔۔۔۔۔ پر سلوک سرسری کتاب سے بھی کم 😔 مجھے رحمٰن نے رحیم بن کے بھی پکارا ۔۔۔۔۔ آ جا آجا ۔۔۔ ساری دنیا کو گیان کی دعوت ہے تو بھی آ ۔۔۔۔ شروع ہو جا۔۔۔۔ لا ریب کہ سراسر ہدایت ہے اس میں لیکن اس کے لیے جو صراطِ مستقیم کو کامیابی کی راہ سمجھے۔۔۔۔ اندھے گونگے بہروں کے لیے وقفے وقفے سے چمکتی برق مشعلِ راہ کر دی ۔۔۔۔ انعام و اکرام کے تھان سجا دیے۔۔۔ مائدہ کے لیے حواریوں کا حق ثابت کیا۔۔۔۔ عشق کی سولی پہ زندگی نواز دی۔۔۔۔۔ اپنے پیاروں کے ساتھ انکی امتوں کی گستاخیوں پہ بارہا سرزنش رقم کی ۔۔۔۔۔ انکاریوں کو نیست کر کے انکے باقیات کو تماشہ نہیں عبرت کی جا بتایا۔۔۔۔۔ قیامت کے قیام کا یقین بھی دلایا۔۔۔۔ جنت سے للچایا ۔۔۔۔ دوزخ سے ڈرایا۔۔۔ اچھا اچھا کہتی ہمیشہ آگے بڑھ جاتی رہی۔۔۔۔۔ یہی سوچ کے اگلی بار سمجھ کے پڑھونگی۔۔۔۔ لیکن۔۔۔۔ سمجھ تو اب بھی آ رہی ۔۔۔ ترجمہ تفسیر جانتی ہوں میں ۔۔۔۔ “جانتی ہو تو پھر آنے کا وعدہ کیوں کرتی ہے ؟؟ آ جا آ جا ۔۔۔۔ ابھی اور بھی ہے۔۔۔۔۔ شاید تجھے ہدایت ملے۔۔۔۔ ”

یاجوج ماجوج کا خوف بہت برسوں سے باقی خوفوں کے ساتھ براجمان ہے۔۔۔۔۔ فبای آلاء ربکما تکذبان کی بار ہا للکار ضمیر کو جھنجھوڑ تو دیتی ہے جگا نہیں پاتی۔۔۔۔۔ میرے دل کے قفل پہ چابی کی مہربانی تو ہے لیکن میرا نفسِ امارہ مجھے نفس ِ مطمئنہ کی جانب میلان کو روکتا ہے۔۔۔
بے شک بے شک میں خسارے میں ہوں۔۔۔۔ چند منٹوں میں پارہ پڑھنے کا اعزاز تھپڑ کی طرح لگتا مجھے ۔۔۔۔ کعبے والا خوف سے امان کا دعوٰی اور رزق ِ بے بہا کا وعدہ دیتا ہے تو جھپٹ لیتی ہوں۔۔۔۔ لیکن جب چاہتا ہے کہ کہہ دوں ۔۔۔ لکم دینکم و لی دینی۔۔۔۔۔ وہاں۔۔۔۔ وہاں میں کنی کترا جاتی ہوں یہ کہتے ہوۓ کہ تیرے صمد ہونے پہ ایمان ہے میرا بس مجھے فلق اور ناس کی پناہیں سونپ دے ۔۔۔۔ آتی ہوں ۔۔۔ آتی ہوں میں ۔۔۔ اب کے پڑھونگی تو دل سے پڑھونگی۔۔۔۔ سچی۔۔۔۔ 💔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *